اسرائیل کی مقبوضہ بیت المقدس میں امریکا کو قونصل خانہ دوبارہ نہ کھولنے کی تنبیہ

مقبوضہ بیت المقدس: اسرائیل نے مقبوضہ بیت المقدس میں امریکا کو اپنا قونصل خانہ دوبارہ نہ کھولنے کی تنبیہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ ایک خراب خیال ہے۔
اسرائیلی وزیر خارجہ یائر لپیڈ کا کہنا ہے کہ مقبوضہ بیت المقدس میں قونصل خانہ کھولنے کا امریکی خیال برا ہے، بیت المقدس اسرائیل کا خودمختار دارالحکومت ہے اور اسی وجہ سے ہمیں لگتا ہے کہ یہ کوئی اچھا خیال نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جانتے ہیں کہ بائیڈن انتظامیہ اس مسئلہ کو ایک الگ انداز سے دیکھتی تاہم ہمیں یقین ہے کہ امریکا اس مسئلہ کو نہایت احتیاط سے دیکھ رہا ہے۔

اسرائیلی وزیر خارجہ نے کہا کہ ابھی اسرائیلی حکومت کمزور ہے اور ہمیں لگتا ہے کہ امریکا کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس میں قونصل خانہ کھولنے سے حکومت مزید کمزور اور غیر مستحکم ہوجائے گی لہذا میرا نہیں خیال کہ امریکی انتظامیہ ایسا چاہے گی۔

About BBC RECORD

Check Also

جسٹن ٹروڈو تیسری بار کینیڈا کے وزیراعظم بن گئے

Share this on WhatsAppاوٹاوا: کینیڈا کی حکمراں جماعت لبرل پارٹی نے انتخابی معرکہ جیت لیا ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے