مفاہمت تو دور حکومت سے بات بھی نہیں کی جانی چاہیے، مریم نواز

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ مفاہمت تو دور حکومت سے بات بھی نہیں کی جانی چاہیے۔اسلام آباد ہائی کورٹ کے باہر میڈیا سے بات کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ عوام پر ناجائز اور نااہل حکومت کو مسلط کیا گیا ہے، ملکی تاریخ میں اتنی نااہل حکومت کبھی نہیں آئی، حکومت کی کارکردگی نہیں تباہی کی بڑی داستان ہے، ملک میں لاقانونیت ہے، جگہ جگہ خواتین سے زیادتی کے واقعات ہورہے ہیں، کسی نے ملک میں تین سال کے دوران کسی چیز کے سستا ہونے کی کوئی خبرسنی، حکومت نے جو حال عوام کا کردیا ہے، اس سے مفاہمت کیسے ہوسکتی ہے، چاہتے ہیں کہ اس حکومت سے عوام کی جلد جان چھوٹے۔

مریم نواز نے کہا کہ مفاہمت تو دور حکومت سے بات بھی نہیں کی جانی چاہیے، ملک میں ظلم کی حکومت ہے، اس ناجائز اور مسلط حکومت کا احتساب نہیں انتقام ہے، اس حکومت کے انتقام کے آگے پیش ہونا کوئی عقلمندی نہیں، نواز شریف پر جو قرض تھا وہ اس سے زیادہ بھگت کر گئے ہیں، انہوں نے 3 سال سیاسی انتقام اور سزائیں بھگتی ہیں, اگر مگر کرنے والوں کو کہوں گی کہ نواز شریف ملک واپس آئیں گے، جب (ن) لیگ کو لگے گا کہ نواز شریف کو واپس آنا چاہیے تو وہ آجائیں گے اور پارٹی کی قیادت کریں گے۔

قومی حکومت سے متعلق شہباز شریف کے بیان کے حوالے سے مریم نواز نے کہا کہ شہبازشریف نے قومی حکومت کی نہیں قومی مفاہمت کی بات کی ہے، باقی سیاسی پارٹیوں کو سوچنا چاہئے کہ ملک کو کیسے آگے لے کر جانا ہے۔ تمام پارٹیوں کو حکومت کے خلاف متحد ہونے کی ضرورت ہے۔اپنے بیٹے جنید صفدر کی شادی سے متعلق مریم نواز نے کہا کہ میرا ایک ہی بیٹا ہے جس کے نکاح کے لئے باہرجانے کی حکومت سے اجازت نہیں مانگی۔

About BBC RECORD

Check Also

سابق بھارتی ایجنٹ نے پاکستان میں ’ را ‘ کا نیٹ ورک بے نقاب کردیا

Share this on WhatsAppاسلام آباد: پاکستان میں بھارتی خفیہ ایجنسی را کا جاسوسی نیٹ ورک ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے