ایک ہی راکٹ میں 143 سیٹلائٹ بھیجنے کا نیا ریکارڈ قائم

کیپ کناورل: گزشتہ چند برس میں منظرِ عام پر آنے والی اسپیس ایکس کمپنی نے اپنے ایک ہی راکٹ سے 143 سیٹلائٹ مدار میں بھیجنے کا نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔ 24جنوری، 2021 کو وقتِ مشرق (ایسٹرن ٹائم) کے مطابق صبح دس بجے ٹرانسپورٹر ون مشن کے تحت فالکن نائن راکٹ بوسٹر نے کیپ کناورل خلائی اڈے سے اڑان بھری جس کے اوپر سیٹلائٹ عین اسی طرح لگائے گئے تھے جس طرح سپر اسٹور کے خانوں میں اشیا رکھی جاتی ہیں۔

اس مشن کو 16 دسمبر 2020 میں خلا کے حوالے کرنا تھا لیکن پانچ مرتبہ مسلسل کوئی نہ کوئی رکاوٹ آڑے آتی رہی جس میں خراب موسم سرِ فہرست ہے۔ آخرکار راکٹ نے اڑان بھری اور ایک منٹ 12 سیکنڈ بعد فالکن نائن میکس کیو درجے سے باہر آگیا جو میکانکی دباؤ کا خطرناک دورانیہ ہوتا ہے۔ اس کے بعد دوسرا انجن اسٹارٹ ہوگیا۔دومنٹ 51 سیکنڈ بعد پے لوڈ (سیٹلائٹ) والا حصہ الگ ہوگیا اور راکٹ زمین پر آگیا جسے دوبارہ استعمال کیا جاسکتا ہے جبکہ راکٹ کے پہلے اسٹیج نے بھی پاور لینڈنگ کی۔

اسپیکس ایکس نے اسمال سیٹ رائیڈ شیئرپروگرام کے تحت یہ سیٹلائٹ بھیجے ہیں۔ ان کا مقصد ایک ہی جست میں قدرے محدود لیکن کم خرچ سیٹلائٹ کو خلا میں بھیجنا ہے۔ اس سے چھوٹے سیٹلائٹ کے منصوبوں پر کام کرنا آسان ہوجاتا ہے۔ اس پے لوڈ میں 133 سیٹلائٹ امریکی حکومت اور نجی کمپنیوں کے تھے جبکہ بعض کیوب سیٹس اور مائیکروسیٹلائٹ بھی شامل تھے۔تاہم دس بڑے سیٹلائٹ کا تعلق اسٹارلنک پروگرام سے ہیں جو قطبینی مدار (پولرآربٹ) میں گردش کریں گے اور اس کی بدولت انٹرنیٹ کی عالمی سہولت فراہم کی جائے گی۔

About BBC RECORD

Check Also

واٹس ایپ نے 20 لاکھ سے زائد بھارتی صارفین کے اکاؤنٹس بلاک کردیے

Share this on WhatsAppکیلی فورنیا: واٹس ایپ نے نقصان دہ اور غلط معلومات پھیلانے پر ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے