Protesters run as they prepare to hurl stones towards the Indian police during a protest after Friday prayers, in Srinagar, May 26, 2017. REUTERS/Danish Ismail - RTX37QJA

بھارتی فوج کی کنٹرول لائن پر گولہ باری سےپاکستانی پانچ شہری شہید

پاکستان: بھارتی فوج نے کنٹرول لائن (حد متارکہ جنگ) کے ساتھ واقع آ زاد جموں وکشمیر کے مختلف علاقوں پر ہفتے کے روز گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں پانچ شہری شہید اور دس زخمی ہوگئے ہیں۔ ادھر بھارت کے زیر انتظام ریاست مقبوضہ جموں و کشمیر میں حزب المجاہدین کے معروف کمانڈر برہان وانی کی شہادت کی پہلی برسی کے موقع پر مظاہروں کو روکنے کے لیے سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے جارہے ہیں۔

پاکستانی حکام کے مطابق کنٹرول لائن کے پار سے آزاد کشمیر کی حدود میں گولہ باری سے شہید ہونے والوں میں چار خواتین شامل ہیں۔گذشتہ کئی ماہ سے حد متارکہ جنگ پر جاری تشدد کے واقعات میں ایک دن میں شہریوں کا یہ سب سے زیادہ جانی نقصان ہے۔

ضلع پونچھ کے ڈپٹی کمشنر راجا طاہر ممتاز نے بتایا ہے کہ ’’ بھارتی فوجی عباس پور اور ہجیرہ سیکٹروں کے مختلف حصوں میں ہفتے کی صبح ساڑھے پانچ بجے سے شدید گولہ باری کررہے ہیں۔انھوں نے بتایا ہے کہ ہجیرہ میں تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ کے نزدیک واقع ایک گاؤں بھیرہ میں ایک 75 سالہ شخص محمد شریف کا گارے سے بنا ہوا مکان مارٹر گولہ گرنے سے مکمل طور پر تباہ ہوگیا ہے اور مالک مکان بھی جان کی بازی ہار گئے ہیں۔ان کے علاوہ ایک ستر سالہ خاتون سسی بیگم کی بھی تیتری نوٹ میں شہادت ہوئی ہے۔

عباس پور سیکٹر میں واقع ایک گاؤں پر گولہ باری سے ایک ہی خاندان کی ایک عورت شہید اور دو زخمی ہوگئی ہیں۔ اسی سیکٹر میں واقع ایک اور گاؤں ڈھکی چفار میں گولہ باری سے ایک 35سالہ خاتون شہید اور اس کا بیٹا زخمی ہوگیا ہے۔یہ دونوں سیکٹر ضلع پونچھ میں واقع ہیں۔ڈپٹی کمشنر نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ بھارتی فوجیوں کی شدید گولہ باری کے پیش نظر ہلاکتوں کی تعداد زیادہ سکتی ہے۔

کنٹرول لائن کے پار سے بھارتی فوجیوں نے ضلع کوٹلی میں واقع نکیال سیکٹر میں بھی مختلف علاقوں پر گولہ باری کی ہے جس کے نتیجے میں ایک خاتون شہید اور تین افراد زخمی ہوگئے ہیں۔واضح رہے کہ اس سال کے دوران میں پاکستان کے زیر انتظام آزاد جموں وکشمیر میں اب تک بھارتی فوج کی گولہ باری سے سترہ افراد شہید ہوچکے ہیں اور ایک سو پانچ زخمی ہوئے ہیں۔

اسلام آباد میں دفتر خارجہ نے بھارت کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کو طلب کیا ہے اور ان سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں اور کنٹرول لائن پر بھارتی فوج کی گولہ باری سے انسانی جانوں کے ضیاع پر شدید احتجاج کیا ہے۔ دفتر خارجہ کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر محمد فیصل نے ایک احتجاجی مراسلہ بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کے حوالے کیا ہے اور شہریوں کو جان بوجھ کر نشانہ بنانے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

انھوں نے بھارتی فوج کی بلا اشتعال کارروائیوں کو عالمی انسانی حقوق اور انسانی قوانین کی کھلی خلاف ورزی قراردیا ہے۔انھوں نے بھارت پر زوردیا ہے کہ وہ 2003ء میں طے شدہ جنگ بندی سمجھوتے کا احترام کرے ،اس کی خلاف ورزیوں کے واقعات کی تحقیقات کرے اور بھارتی فورسز کواس سمجھوتے کی پاسداری کرنے اور کنٹرول لائن پر امن برقرار رکھنے کی ہدایت کرے ۔

About BBC RECORD

Check Also

تائیوان میں رہائشی عمارت میں آتشزدگی سے 46 افراد ہلاک، متعدد زخمی

Share this on WhatsAppتائی پے: تائیوان میں 13 منزلہ رہائشی عمارت میں آتشزدگی سے 46 ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے