پنجاب میں واپڈا ملازم بجلی چوروں کو میٹر، ٹرانسفارمرز فروخت کرتے ہیں

شبیر سدوزئی
بی بی سی ریکارڈ ڈاٹ کام؛ ( ڈی جی خان )

پاکستان: کے صوبہ پنجاب کے کئی اضلاع میں واپڈا ملازمین کرپشن کرنے کیلئے میٹر 5000روپے ٹرانسفارمرز لاکھوں میں جبکہ کیبل چار ہزار روپے میں فروخت کیے جاتے ہیں یہ کام متعلقہ ایس ڈی او اور ایکسئن لیول کے افسر کے مابین ہوتا ہے

ڈی جی خان میں ہمارے بیورو چیف کے مطابق سب ڈویژن صدر دین میں تعینات ایس ڈی او شہباز بھٹی جو کہ ڈی جی خان کا رہائشی ہے جو سرکاری سامان فروخت کرنے کا ماہر ہے جس میں پول سلور تار میٹر پی وی سی تار اور بجلی چوری کرا کر ماہانہ لاکھوں روپے بھتہ وصول کرتا ہے نہ دینے والے کو سی پی 90 ڈیفیکتڈ کوڈ لگا ڈیٹیکشن ڈال کر زلیل کرتا ہے فیکٹری مالکان سے بھی لاکھوں روپے سالانہ وصول کرتا ہے ورنہ پندرہ پندرہ گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کرکے ان کا لاس کرتا ہے

یونٹ بچانے کیلئے اس کی سب ڈویژن میں سب سے زیادہ لوڈ شیدنگ ہوتی ہے شہری کے مطابق بارش کی وجہ سے جلنے والے میٹر کو تبدیلی کیلئے 5000 روپے ؤصول کیے جبکہ ایس ای اکرام کے مطابق ایسا نہیں ہوتا جبکہ ایس ای کے کہنے پر میٹر نہ ہونے کہ کر معذرت کر لی جبکہ اپنے باپ کے ذریعے پانچ ہزار شہری سے وصول کر کے ایک ہی دن میں میٹر لگوا دیا

اس کے علاقے میں کئی دو نمبر میٹر لگے ہوئے ہیں جن سے لائن مین ایس ڈی سی رشوت ؤصول کرتے ہیں جو ایس ڈی او تک جاتی ہے کئی اکاونٹ موجود ہیں جن کا کوئی ریکارڈ نہیں ہے ڈی جی خان میں نئی بننے والی غیر قانونی کالونیوں جن کا نقشہ تک منظور نہ ہوتا ہے ان کالونیوں میں بجلی فراہم کر کے ان سے فی پول30000.اور میٹر پانچ ہزار ؤصول کیے جاتے ہیں

متعدد افراد جو آواز اٹھاتے ہیں ان جھوٹے مقدمات کراکر ان کو زلیل کیا جاتا ہے جبکہ شہریوں کی طرف سے ایسی کئی کمپلینٹ میپکو چیف ملتان کو بھجی جا چکی ہیں جن پر اب تک کوئی کاروائی نہ ہوئی ہے

متعلقہ ایس ڈی او نے الزام لگایا کہ ہم رشوت اکیلے نہیں لیتے یہ پیسے جناب عابد شیر علی تک جاتے ہیں جبکہ اس بارے ( بی بی سی ریکارڈ لندن ) انگریزی سائیٹ کے بیورو چیف عابد شیر علی سے موقف ضرور لیں گے جو شائع کیا جائے گا جبکہ یہ قصہ پورے پنجاب کا ہے عوام اور افیسران کے درمیان کئی بار جھگڑے ہو چکے ہیں شکایات کیلئے پروٹیسٹ بھی کیے گئے

About BBC RECORD

Check Also

سینیٹ انتخابات میں پی ٹی آئی کی کامیابی کیلئے وزیراعظم میدان میں آگئے

Share this on WhatsAppڈاکٹر ذولفقار کاظمی بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز؛ اسلام آباد سینیٹ ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے