’شیطان بزرگ‘ اور ایران کے مابین 17 ارب ڈالر کی ڈیل

ایران کی قومی ایئر لائن اور امریکی طیارہ ساز کمپنی بوئنگ کے مابین 80 مسافر طیاروں کی خریداری کا معاہدہ طے پا یا ہے۔ اس معاہدے کے تحت ایران ’شیطان بزرگ‘ سے 50 بوئنگ 737 جہاز اور 30 بوئنگ 777 طیارے خریدے گا۔

سنہ 1979 کے اسلامی انقلاب کے بعد سے ایران اور امریکا کے درمیان یہ اب تک کا سب سے بڑا معاہدہ ہے۔

ایرانی خبر رساں ایجنسی’ارنا‘ نے ایرانی ایئر لائن کے ڈائریکٹر جنرل فرہاد پرورش کے حوالے سے کہا کہ اس معاہدے کی مجموعی مالیت 16 ارب 60 کروڑ ڈالر ہے اور امریکی حکومت نے بھی اس معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔ معاہدے کے تحت بوئنگ کمپنی اگلے دس سال کے دوران ایران کو مسافر طیارے فراہم کرے گی۔

اس معاہدے سے ایران کی ایوی ایشن صنعت میں جدت آئی گی جو اس وقت عمر رسیدہ کمرشل جہازوں پر گزارا کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ رواں سال ستمبر میں امریکی حکومت نے طیارہ ساز کمپنی بوئنگ اور ایئر بس کو ایران سے معاہدے کرنے کی اجازت دی تھی۔

ایران اور مغربی ممالک کے مابین تہران کے متنازع جوہری پروگرام پر14 جولائی 2015ء کو معاہدے کے بعد ایران پر عائد عالمی پابندیاں ختم ہونا شروع ہوئیں تھیں۔ اس معاہدے کے بعد ایران اور امریکا کے درمیان تجارتی معاہدوں کی راہ بھی ہموار ہوئی ہے۔

امریکا کے نو منتخب صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایران کے ساتھ جوہری معاہدے پر تنقید کی تھی اور کانگریس میں موجود رپبلکن نمائندوں نے اس معاہدے کی توثیق روکنے کی کوشش کی تھی۔

گذشتہ ماہ امریکی ایوانِ نمائندگان نے ایک قانون کی منظوری دی جس کے تحت ایران کو کمرشل طیاروں کی فروخت کو روکا جا سکتا ہے۔

ایرانی فضائی کمپنی Iran Air اور امریکی بوئنگ کمپنی کے درمیان پہلے تو 100 مسافر طیاروں کے لیے 25 ارب ڈالر مالیت کا معاہدہ طے پایا تھا تاہم بعد ازاں طیاروں کی تعداد کم کرکے 80 کردی گئی تھی۔ ایران ان میں سے 20 جہاز وصول کرچکا ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

ولی عہد محمد بن سلمان پاکستان کا دورہ کرنے کے خواہشمند ہیں، سعودی وزیرخارجہ

Share this on WhatsAppریاض: سعودی وزیرخارجہ نے کہا ہے کہ عمران خان کادورہ سعودی عرب ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے