امریکی عدالت نے شمالی کوریا کے آئل ٹینکر پر قبضے کو جائز قرار دیدیا

نیویارک: امریکی عدالت نے مارچ 2020 میں شمالی کوریا کو تیل فراہم کرنے کے لیے جانے والے سنگاپور کے آئل ٹینکر پر قبضے کو جائز قرار دیتے ہوئے جہاز کی ملکیت کا اختیار دیدیا خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا نے عالمی پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شمالی کوریا کو تیل کی فراہم کرنے کے لیے جانے والے سنگاپور کے آئل ٹینکر کو 2020 میں ضبط کرلیا تھا۔ آئل ٹینکر پر 2019 میں چار ماہ کے دوران تیل کی فراہمی کا الزام بھی تھا۔

تاہم اب نیو یارک کے ایک وفاقی جج نے آئل ٹینکر کی ضبطی کا حکم جاری کرتے ہوئے کہا کہ ایک برس سے کمبوڈیا میں موجود سنگاپور کے اس آئل ٹینکر کی ملکیت امریکا کو لینے کا اختیار دیتا ہے۔امریکی وفاقی عدالت میں سماعت کے دوران سنگاپور کی کمپنی اور مالک پر، شمالی کوریا پر اقتصادی پابندیوں سے بچنے کی سازش اور منی لانڈرنگ کی دفعات عائد کی گئی تھیں۔امریکی محکمہ انصاف کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ شمالی کوریا کو تیل فروخت کرنے کی عالمی پابندی کی خلاف ورزی پر سنگاپور کے آئل ٹینکر کو ضبط کیا گیا تھا۔ آئل ٹینکر میں 15 لاکھ ڈالر مالیت کا 2 ہزار 734 ٹن تیل موجود ہے۔

امریکی محکمہ انصاف کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ آئل ٹینکر مبینہ طور پر شمالی کوریا کے جہازوں میں تیل کی مصنوعات کی منتقلی اور شمالی کوریا کی بندرگاہ نامپو تک براہ راست تیل کی ترسیل کے لیے استعمال کیا گیا تھا۔واضح رہے کہ امریکی درخواست پر کمبوڈیا کی حکومت نے دو سال قبل اس آئل ٹینکر کو قبضے میں لے لیا تھا جس کے بعد وفاقی امریکی عدالت میں کیس چلا تھا جس میں آئل ٹینکر کمپنی کے مالک بھی شریک تھے۔

About BBC RECORD

Check Also

تائیوان میں رہائشی عمارت میں آتشزدگی سے 46 افراد ہلاک، متعدد زخمی

Share this on WhatsAppتائی پے: تائیوان میں 13 منزلہ رہائشی عمارت میں آتشزدگی سے 46 ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے