پولیس اہلکاروں کا مستند اور معیاری لیبارٹیز سے ڈرگ ٹیسٹ کروایاجائے او فیصل رانا

منشیات استعمال کرنے والا کوئی بھی شخص کسی بھی حیثیت میں پولیس فورس کا حصہ نہیں ہو گا

شبیر خان سدوزئی

بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز؛ ڈیرہ غازی خان

منشیات استعمال کرنے والے افسران اور اہلکاروں کے خلاف آئی جی کے احکامات کی تعمیل،آر پی او فیصل رانا کی طرف سے چاروں اضلاع میں ماتحت سٹاف کی ہیلتھ پروفائلنگ مکمل کروانے کا حکم، منشیات استعمال کرنے والا پولیس کا کوئی آفیسر یا اہلکار فورس کا حصہ نہیں ہو گا،کسی کی بلا وجہ پگڑی بھی نہیں اچھالی جائے،افسران اور اہلکاروں کا مستند اور معیاری لیبارٹیز سے ڈرگ ٹیسٹ کروایاجائے،آر پی او فیصل رانا کی ہدایات جاری، وزیر اعظم پاکستان عمران خان کے پولیس ریفارمز ویژن پر عمل داری کے لئے آئی جی پنجاب انعام غنی نے گزشتہ روز جو احکامات جاری کئے

ڈی جی خان ریجن میں اس کی فوری تعمیل شروع ہو گئی،ریجنل پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے ریجن کے چاروں اضلاع ڈی جی خان،مظفر گڑھ،لیہ اور راجن پور کے پولیس افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ آئی جی پنجاب انعام غنی کے ان احکامات پر گراس روٹ لیول تک پورے سپرٹ کے ساتھ عمل کیا جائے،انہوں نے کہا کہ آئی جی پنجاب کی واضح اور دو ٹوک ہدایات ہیں کہ منشیات استعمال کرنے والا کوئی بھی شخص کسی بھی حیثیت میں فورس کا حصہ نہیں ہو گا،پولیس کا کوئی آفیسر یا اہلکار اگر منشیات استعمال کرنے میں ملوث پایا گیا تو اس کے خلاف بیک وقت محکمانہ اور قانونی کارروائی ہو گی،

انہوں نے کہا کہ آئی جی پنجاب کے اس مستحسن اقدام سے ان پولیس اہلکاروں کی نشاندہی بھی ہو جائے گی جو کسی نہ کسی طرح کسی منشیات فروش کے ساتھ مکس اپ ہیں یا اس مکروہ دھندے میں اس کے سہولت کار ہیں،کیوں کہ منشیات کا استعمال کرنے والا منشیات فروشوں کا پشت پناہ،سہولت کار یا انکے لئے ”نرم گوشہ“ رکھنے والا ہوتا ہے،انہوں نے کہا کہ ریجن بھر کے پولیس افسران اور اہلکاروں کی ہیلتھ پروفائلنگ مکمل کروائی جائے گی،مستند ہیلتھ لیبارٹریز سے ٹیسٹنگ کروائی جائے گی تاہم اس بات کا مکمل خیال رکھا جائے کہ بلا ثبوت کسی پر الزام لگا کر اس کی پگڑی بھی نہیں اچھالی جائے،آر پی او فیصل رانا نے کہا کہ اس حوالے سے قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں اور خفیہ ایجنسیز سے معلومات کا تبادلہ بھی کیا جائے تاکہ اسی سپرٹ کو مکمل طور پر مدنظر رکھا جائے جو آئی جی پنجاب نے وزیر اعظم پاکستان کے پولیس ریفارمزکو عملی جامہ پہنانے کے لئے اٹھایا ہے،انہوں نے کہا کہ ہیلتھ پروفائلنگ کے عمل کو مکمل شفاف اور بامقصد و نتیجہ خیز بنانے کے لئے میں خوداس سارے عمل کی نگرانی کروں گا.

About BBC RECORD

Check Also

‘شادی کے بعد عورت کی مرضی ہے خاوند کا نام لکھوائے یا والد کا’

Share this on WhatsAppلاہور؛ چیئرمین نادرا طارق ملک نے کہا ہے کہ نادرا کی پالیسی ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے