امارات اور اسرائیل کے درمیان پہلی کمرشل پرواز آج

متحدہ عرب امارات اور اسرائیل کے درمیان تعاون کے حوالے سے نقشہ راہ اور سہ فریقی مشترکہ اعلان کے سلسلے میں ،،، امریکا اور اسرائیل کا ایک وفد آج پیر کے روز امارات کا دورہ کر رہا ہے۔مذکورہ وفد میں اسرائیل کے مختلف سیکٹروں کے متعدد نمائندے شامل ہیں جو امارات کی سرزمین پر اترنے والے پہلے اسرائیلی کمرشل طیارے میں سوار ہوں گے۔ وفد کی قیادت امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سینئر مشیر جیرڈ کشنر کر رہے ہیں۔ علاوہ ازیں وفد میں امریکی قومی سلامتی کے مشیر روبرٹ اوبرائن اور اسرائیلی قومی سلامتی کونسل کے سربراہ اور مشیر مائر بن شبات بھی شامل ہیں۔

یہ وفد امارات میں سرکاری اداروں کے متعدد نمائندگان سے ملاقات کریں گے۔ اس کا مقصد متعلقہ شعبوں میں تعلقات کے مستقبل، مشترکہ طور پر کام کرنے اور امن معاہدے کے نتیجے میں تعاون کے بڑے اور تاب ناک مواقع کو زیر بحث لانا ہے جن کے دونوں ممالک منتظر ہیں۔

یاد رہے کہ متحدہ عرب امارات نے رواں ماہ 13 اگست کو اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کا اعلان کیا تھا۔ اس موقع پر جاری ایک مشترکہ بیان میں بتایا گیا کہ ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زائد آل نہیان ، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کے درمیان ٹیلی فون کال پر اسرائیل اور امارات کے بیچ مکمل دو طرفہ تعلقات استوار کرنے کے حوالے سے اتفاق ہو گیا ہے۔

متعدد یورپی اور عرب ممالک کی جانب سے اس معاہدے کا بڑے پیمانے پر خیر مقدم کیا گیا۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ امارات اور اسرائیل کے درمیان معاہدہ جو فلسطینی اراضی کے مزید انضمام کو روک دے گا ،،، اس پر آئندہ تین ہفتوں کے دوران وائٹ ہاؤس میں دستخط ہوں گے۔ معاہدے پر اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو اور ابوظبی کے ولی عہد شیخ محمد بن زائد آل نہیان دستخط کریں گے۔

About BBC RECORD

Check Also

وزیراعظم پاکستان نے گستاخانہ خاکوں کا معاملہ اقوام متحدہ میں اٹھادیا، اسلامو فوبیا کیخلاف یوم منانے کا مطالبہ

Share this on WhatsAppڈاکٹر زولفقار کاظمی بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز؛ اسلام آباد پاکستان ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے