ترکی کی فوجی مشقوں کے سبب یونان کی فوج کا "الرٹ لیول” بلند ترین

یونان کی فوج نے اپنی فورسز کو انتہائی ترین سطح پر الرٹ کر دیا ہے۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق یہ اقدام ترکی کی جانب سے بحیرہ روم کے مشرق میں عسکری مشقوں کی منصوبہ بندی کے اندیشے کے سبب کیا گیا ہے۔ ترکی دو جزیروں روڈس اور کیسٹیلوریزو کے درمیان مشقیں انجام دینے کا ارادہ رکھتا ہے۔انگریزی ویب سائٹ "آرمی وائس” نے اتوار کی شب بتایا کہ یونانی فوج کی قیادت نے تقریبا تمام یونٹوں میں فوجی اہل کاروں کی رخصت کو منسوخ کرتے ہوئے چھٹی پر گئے ہوئے افسران کو طلب کر لیا ہے۔

ویب سائٹ کے مطابق یونانی فوج تیز رفتاری کے ساتھ حرکت میں آ رہی ہے۔ بالخصوص حساس مقامات پر ،،، ان میں ترکی کی زمینی سرحد کے نزدیک واقع یونانی علاقہ ایفروس شامل ہے۔توقع ہے کہ ترکی کی مشقیں آج پیر کے روز شروع ہوں گی۔ ترکی کی جانب سے مشقوں کا پروگرام یونان اور مصر کے درمیان سمندری حدود سے متعلق خصوصی سمجھوتا طے پانے کے بعد جوابی کارروائی کے طور پر سامنے آیا ہے۔

یہ چند ہفتوں کے دوران دوسرا موقع ہے جب یونانی فوج نے اپنی فورسز کے حرکت میں آنے کا اعلان کیا ہے۔ادھر یورپی یونین کے وزیر خارجہ جوزف بورل کا کہنا ہے کہ مصر اور یونان کے درمیان سمندری حدود کا معاہدہ دستخط ہونے کے بعد بحیرہ روم میں ترکی کی سمندری نقل و حرکت شدید تشویش کا باعث ہے۔ بورل نے ایک بیان میں کہا کہ اس اقدام کے نتیجے میں اختلاف اور عدم اعتماد میں اضافہ ہو گا۔

یورپی یونین کے وزیر خارجہ کے مطابق "سمندری حدود کا تعین بات چیت اور مذاکرات کے ذریعے ہونا چاہیے نہ کہ یک طرفہ طور پر سمندری فورسز کو حرکت میں لا کر”۔انہوں نے باور کرایا کہ اختلافات کو بین الاقوامی قانون کے مطابق حل کیا جانا چاہیے۔ بورل نے واضح کیا کہ "حالیہ طور اپنایا گیا راستہ یورپی یونین اور ترکی کے مفاد میں ہر گز نہیں ،،، ہم پر لازم ہے کہ بحیرہ روم کے امن کی خاطر مل جل کر کام کریں”۔

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن نے جمعے کے روز بحیرہ روم کے مشرق میں متنازع علاقے کے اندر ایندھن کی تلاش کے لیے کھدائی دوبارہ شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔ یہ اعلان ایتھنز اور قاہرہ کے درمیان سمندری حدود سے متعلق سمجھوتے پر دستخط کے بعد سامنے آیا۔

About BBC RECORD

Check Also

ننگرہار میں مسلح افراد کی مسجد میں فائرنگ سے 8 افراد ہلاک

Share this on WhatsAppننگرہار: افغان صوبے ننگرہار میں مسلح افراد نے مسجد میں فائرنگ کرکے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے