بھارت میں بدبخت بیٹے نے 90 سالہ کورونا کی مریضہ ماں کو جنگل میں چھوڑ دیا

بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ اورنگ آباد

بھارتی ریاست مہاراشتڑا میں ایک بیٹے نے کورونا ٹیسٹ مثبت آنے پر اپنی 90 سالہ ماں کا علاج کرانے کے بجائے انہیں ایک چادر مین لپیٹ کر جنگل میں مرنے کے لیے اکیلا چھوڑ دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق مہاراشٹرا کے شہر اورنگ آباد کے کچی گھاٹی کے جنگل میں 90 سالہ خاتون نیم مردہ میں حالت میں محکمہ جنگلات کے رضا کاروں کو ملی ہیں۔ ضعیف خاتون نے بتایا کہ کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آنے پر بیٹا مجھے جنگل میں پھینک گیا۔

محکمہ جنگلات کے رضاکاروں نے بوڑھی و نحیف ماں کو قریبی سرکاری اسپتال منتقل کیا جہاں ان کا علاج جاری ہے اور اب ان کی طبیعت خطرے سے باہر بتائی جارہی ہے۔ پولیس نے بیٹے کے خلاف مقدمہ درج کرکے اہل خانہ کی تلاش شروع کردی ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں جہالت اور لاعلمی کے باعث کورونا وائرس کے مریضوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک کیا جاتا ہے، یہاں تک کہ کورونا وائرس سے مرنے والے مریضوں کی آخری رسومات ادا کرنے سے بھی کتراتے ہیں۔ ایسی ہی ایک صورت حال میں مسلمان اہل محلہ میں دہلی میں ایک ہندو کی آخری رسومات ادا کی تھیں۔

About BBC RECORD

Check Also

یمن کی آئینی حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ طے پا گیا

Share this on WhatsAppیمن میں آئینی حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے