فلاحی کاموں کی آڑ میں مسلمانوں کو قادیانی بنانے کا انکشاف

شبیر خان سدوزئی
بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ راجن پور

پنجاب کے ضلع راجن پور میں مختلف سکولوں اور فلاحی کاموں کی آڑ میں سادہ لوح مسلمانوں اور معصوم بچوں اور بچیوں کو قادیانی بنانے کا سلسلہ جاری ہے
جس پر سوشل سروسز گروپ نے انٹرنیشنل ختم نبوت, عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت, وکلاء صاحبان, علماء کرام, پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا اور سول سوسائٹی کے ساتھ ملکر ایک تحریری درخواست ڈپٹی کمشنر راجن پور جناب ذوالفقار علی کھرل کو پیش گزاری

جس پر ڈپٹی کمشنر نے سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ سے موضع جاگیر گبول بستی اللہ داد دریشک مرزائی میں قائم قادیانی مشنری سکول جو کہ قادیانی NGO ہیومنٹی فرسٹ کے زیر اہتمام چل رہا تھا کی رپورٹ طلب کی. جس پر سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ نے موقع پر جا کر تمام شواہد اکٹھے کیئے اور رپورٹ مرتب کی جس میں واضح طور پر سوشل سروسز گروپ کی طرف سے دی جانے والی درخواست میں لگائے جانے والے الزامت درست ثابت ہوئے. جس پر ضلعی انتظامیہ نے قادیانیوں کے مشنری سکول کو فوری سیل کر دیا

بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ سے گفتگو کرتے ہوئے صدر سوشل سروسز گروپ ندیم چوہدری نے بتایا کہ تمام تر شواہد کے پیش نظر ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر راجن پور کو سوشل سروسز گروپ نے تحفظ ختم نبوت کی سینئر وکلاء پر مشتمل لیگل ٹیم کے ہمراہ اندراج مقدمہ کی درخواست گزاری جس پر کئی گھنٹے کی طویل جرح کے بعد مقدمہ نمبر 325÷20 تو درج کرلیا گیا.لیکن 8 دن گزر گئے مجرمان کو گرفتار نہ کیا جا سکا. جس کی وجہ سے راجن پور کے مسلمانوں میں شدید بے چینی اور اضطراب پایا جاتا ہے اور مجرمان کی عدم گرفتاری پر شدیس تشویش لاحق ہے اور خدشہ ہے کہ پولیس کی اس غفلت کے نتیجہ میں مجرمان دیگر گستاخوں کی طرح بیرون ملک فرار ہو سکتے ہیں


ندیم چوہدری نے بتایا نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ پنجاب پولیس اس کیس میں غفلت کا مظاہرہ کررہی ہے مجرمان کی گرفتاری کیلئے فوری کاروائی عمل میں لائی جائے اور ان تمام مجرمان کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ ECL میں ڈالے جائیں تاکہ ہمارے بچوں کو مرزائیت کی تبلیغ کرنے والے باآسانی ملک سے فرار اختیار نہ کر سکیں.

بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سے انکے موبائل نمبر 03009794002 پر رابطہ کرنے کی کوشش کی لیکن روایتی انداز کے مطابق انہوں نے کال اٹینڈ نہ کی اس سے زیادہ پولیس کی بے حسی اور کیا ہوگی عوام کو تحفظ فراہم کرنے والے کیسے تحفظ دیں گے جو کسی شہری کی فون کال نہ اٹھائیں

ایڈیشنل آئی جی ساوتھ پنجاب انعام غنی نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ اس مقدمہ میں تمام قانونی تقاضے پورے کیے جائیں گے اور ملزمان کی جلد از جلد گرفتاری عمل میں لائی جائے گی کوتاہی برتنے والے آفیسران کی پنجاب پولیس میں کوئی جگہ نہیں ہے

About BBC RECORD

Check Also

بھارت میں بدبخت بیٹے نے 90 سالہ کورونا کی مریضہ ماں کو جنگل میں چھوڑ دیا

Share this on WhatsAppبی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ اورنگ آباد بھارتی ریاست مہاراشتڑا ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے