ایران اپنے ایجنٹوں اور دہشت گردوں کو اسلحہ دے کر کشیدگی بھڑکا رہا ہے

بحرین اور امریکا کی جانب سے پیر کی شام جاری ایک مشترکہ بیان میں ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع پر زور دیا گیا ہے۔بیان میں باور کرایا گیا کہ دونوں ممالک ایران کی جانب سے جارحیت اور فکری گمراہی کے انسداد کے سختی سے پابند ہیں۔ ساتھ ہی ایران کو اسلحے کی فروخت پر پابندی کے حوالے سے بین الاقوامی فیصلے کی توسیع کی اہمیت پر زور دیا گیا۔

بیان میں کہا گیا کہ ایران خطے میں اپنے ونگز کو مسلح کر رہا ہے لہذا مذکورہ پابندی اس عمل کا مقابلہ کرنے میں نمایاں اہمیت کی حامل ہے۔ اس طرح ستمبر 2019 میں سعودی عرب میں ارامکو کی تنصیب پر ایرانی حملے جیسی کارروائیوں سے بچا جا سکے گا۔

مشترکہ بیان میں خبردار کیا گیا کہ عالمی برادری اسلحے پر مذکورہ پابندی کی توسیع میں ناکام ہو گئی تو ہتھیاروں کی دوڑ خطے کو عدم استحکام سے دوچار کر دے گی۔ بیان میں زور دیا گیا کہ سلامتی کونسل عالمی امن اور سلامتی کے تحفظ کے حوالے سے اپنی ذمے داری پوری کرے۔

دوسری جانب ایران کے امور کے حوالے سے امریکی نمائندے برائن ہُک نے باور کرایا ہے کہ امریکا کسی طور بھی ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے کی اجازت نہیں دے گا۔ انہوں نے یہ بات پیر کے روز العربیہ نیوز چینل کے ساتھ گفتگو میں کہی۔برائن ہُک نے پیر کے روز سعودی وزیر مملکت برائے خارجہ امور عادل الجبیر کے ساتھ ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ایران پر عائد اسلحے کی پابندی ختم نہیں کی جانی چاہیے۔

About BBC RECORD

Check Also

شام میں گرفتارہونے والے امریکی تربیت یافتہ دہشت گرد کا دلچسپ بیان

Share this on WhatsAppبی بی سی ریکارڈ لندن نیوز؛ بغداد شام میں پکڑے گئے دہشت ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے