سعودی عرب کی سرحد پر ایک اور حزب اللہ کا وجود قبول نہیں: برائن ہک

ایران کے لیے امریکا کے خصوصی ایلچی برائن ہک نے کہا ہے کہ امریکا سعودی سرحد پر لبنانی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی طرز پر کسی اور گروپ کو سر اٹھانے کی اجازت نہیں دے گا۔انہوں نے الحدث ٹی وی چینل سے خصوصی بات کرتے ہوئے کہا کہ میں نے خود ایران کی طرف سے یمن کے حوثی باغیوں کو دیے گئے ہتھیار دیکھے ہیں۔ جب میں نے سعودی عرب کا دورہ کیا مجھے ایران کی طرف سے حوثٰی باغیوں کو ایرانی اسلحیہ اور فوجی سازو سامان کی فراہمی کے ثبوت دکھائے گئے تھے۔ برائن ہک کا کہنا تھا کہ میں نے الریاض میں سعودی عرب کے نائب وزیر دفاع شہزادہ خالد بن سلمان سے بھی یمن کے حوثی باغیوں کے بارے میں تفصیل سے تبادلہ خیال کیا تھا۔انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ واشنگٹن ایران پر حوثیوں کی مالی مدد کم کرنے کے لیے طرف دباؤ ڈال رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تہران کے بارے میں ہماری حکمت عملی تین پہلوئوں پر مبنی ہے – معاشی پابندیاں ، سفارتی تنہائی اور فوجی طاقت کا استعمال جیسے تین آپشن ہیں۔

شام کے تنازع کے بارے میں بات کرتے ہوئے امریکی ایلچی نے کہا کہ ہمارا مقصد ایرانی ملیشیاؤں کو شام سے نکالنا ہے۔ تہران کی ملیشیائیں شام کی سرزمین پر منتقل ہو رہی ہیں اور شمالی شام میں اپنا اثرو نفوذ بڑھا رہی ہیں۔ایک سوال کے جواب میں برائن ہک کا کہنا تھا کہ شام کے حوالے سے ایران کی خارجہ پالیسی اور حزب اللہ کے بارے میں روس اور شامی حکومت کی دلچسپی کم ہوئی ہے۔انہوں نے انکشاف کیا کہ شام کی تعمیر نوکے لیے 400 ارب ڈالرکی رقم درکار ہے۔ روس یہ قیمت ادا نہیں کرے گا۔انہوں نے یہ بات زور دے کر کہی کہ امدادی ممالک اور ہم اس وقت تک تعمیر نو میں ایک پیسہ بھی ادا نہیں کریں گے جب تک کہ ہم شام سے ایرانی ملیشیا کا خاتمہ نہیں کردیتے۔

حزب اللہ کے بارے میں ، ہک نے دعویٰ کیا کہ ایران نے حزب اللہ کو اپنے بجٹ کا 70 فیصد فراہم کیا ہے۔ تہران کے بارے میں امریکا کی پالیسی نے حزب اللہ کو اس حد تک کمزور کردیا کہ حسن نصراللہ چندہ مانگ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم حزب اللہ پر عائد پابندیوں کے نتائج سے خوش ہیں۔ جرمنی کی جانب سے حزب اللہ کو بلیک لسٹ اور دہشت گرد تنظیم قرار دینے کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں۔برائن ہک نے کہا کہ حزب اللہ لبنان کی کمزوری کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہماری پالیسی لبنانی عوام کے ساتھ کھڑی ہونے کی ہے اور ہم نے بدعنوانی ، بے روزگاری اور معیشت کی بحالی کے حق میں مظاہرے دیکھے ہیں۔ حزب اللہ اپنے ملک میں ہونے والے معاشی بحران کے نتائج کی ذمہ دار ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

شام میں گرفتارہونے والے امریکی تربیت یافتہ دہشت گرد کا دلچسپ بیان

Share this on WhatsAppبی بی سی ریکارڈ لندن نیوز؛ بغداد شام میں پکڑے گئے دہشت ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے