تُرکی سے جنگجووں کی لیبیا منتقلی روکنے کے لیے مصر کی یورپی ممالک سے مشاورت

لیبیا میں جنگ بندی کے حوالے سے مصر کی کوششوں کے بعد عربی نیوز چینل کو باوثوق ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ قاہرہ نے یورپی ممالک سے جنگجوئوں کی لیبیا منتقلی روکنے کے لیے ترکی پردبائو ڈالنے کے لیے مشاورت شروع کی ہے۔ مصر نے لیبیا میں ترکی کے ذریعے جنگجوئوں کی آمد کے مصر کی قومی سلامتی اور لیبیا کی اندرونی صورت حال پر اثرات پر بھی مشاورت کی جا رہی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ قاہرہ کی طرف سے یورپی ممالک کے ساتھ بات چیت میں 48 گھنٹے میں لیبیا میں جنگ بندی کی ضمانت حاصل کرنے اور جنگجوئوں کی پسپائی کی یقین دہانی حاصل کرنےکی کوشش کی جا رہی ہے۔

مصری وزیرخارجہ سامح شکری نے ہفتے کے روزاقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹیرس، افریقی یونین کے چیئرمین موسیٰ فقیہ، الجزائر، مراکش، تونس، نیجر، سعودی عرب، امارات اور اردن کے وزرا خارجہ سے ٹیلیفون پر لیبیا کی تازہ صورت حال اور جنگ بندی کی کوششوں پرمشاورت کی۔ مصری وزیرخارجہ نے عالمی رہ نمائوں سے بات چیت میں لیبی فوج کے سربراہ جنرل خلیفہ حفتر اور مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے درمیان ہونے والی ملاقات اور لیبیا میں جنگ بندی کی کوششوں کے بارے میں تفصیلات سے آگاہ کیا۔

About BBC RECORD

Check Also

یمن کی آئینی حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے کا معاہدہ طے پا گیا

Share this on WhatsAppیمن میں آئینی حکومت اور حوثی باغیوں کے درمیان قیدیوں کے تبادلے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے