خامنہ ای دہشت گردوں کے ہاتھ مضبوط کرتے ہیں ، ڈاکٹروں کو بھگا دیتے ہیں : امریکا

بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ امریکہ
وزارت خارجہ نے ایرانی رہبر اعلی کی ایک تصویر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ علی خامنہ ای ایرانی پاسداران انقلاب اور اس کے جنگجوؤں کو سپورٹ کر رہے ہیں اور بعض ڈاکٹروں کو ملک سے بے دخل کر رہے ہیں۔امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان مورگن اورٹیگوس نے پیر کی شام ٹویٹر پر خامنہ ای کی ایک تصویر پوسٹ کی جس میں وہ ایرانی القدس فورس کے نئے سربراہ اسماعیل قآنی سے مصافحہ کر رہے ہیں۔ اس موقع پر ہنسی نے ان کے چہرے پر ڈیرہ ڈالا ہوا ہے۔ اورٹیگوس نے ٹویٹ میں لکھا کہ "یقینا یہ ایک حیرت انگیز امر ہے ! علی خامنہ ای نے ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز کو تو بے دخل کر دیا جو کرونا وائرس کے مارے ہوئے ایرانی عوام کی مدد کرنے کی کوشش کر رہے تھے ،،، جب کہ وہ واریئرز وِد آؤٹ بارڈرز یعنی پاسداران انقلاب کو سپورٹ کر رہے ہیں جو خطے میں دہشت گردی پھیلا رہے ہیں”۔

یاد رہے کہ ایرانی حکام نے سخت گیر حلقوں کے دباؤ میں آ کر غیر سرکاری تنظیم "ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز” کے وفد کو ملک سے بے دخل کر دیا۔ اس وفد نے کرونا کے مریضوں کے علاج کے واسطے ایک فیلڈ ہسپتال بھی قائم کیا تھا۔ایسا نظر آرہا ہے کہ ایرانی حکومت کی جانب سے بین الاقوامی تنظیم "ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز” کی پیش کردہ مدد مسترد کرنے کے پیچھے بہت زیادہ دباؤ کا ہاتھ ہے۔ فرانس کے اخبار ليبراسيون کے مطابق ایران نے حیران کن طور پر مذکورہ تنظیم کی جانب سے اصفہان شہر میں فیلڈ ہسپتال بنانے کی پیش کش کو قبول کرنے سے انکار کر دیا۔ اس پیش کش کا مقصد کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے اور متاثرہ افراد کی علاج میں مدد کرنا تھا۔ دل چسپ بات یہ ہے کہ اس سے قبل ایرانی حکام کی جانب سے ہسپتال تعمیر کرنے کی اجازت دے دی گئی تھی۔ادھر "ايران انٹرنیشنل” نیٹ ورک نے بھی ایسی دستاویزات جاری کی ہیں جن سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ایرانی حکام نے ڈاکٹرز وِد آؤٹ بارڈرز تنظیم سے مدد کی درخواست کی تھی۔

About BBC RECORD

Check Also

بھارت:فیس بُک پراسلام مخالف پوسٹ کے ردِّعمل میں پُرتشدد احتجاج، تین افراد ہلاک،100 گرفتار

Share this on WhatsAppبھارت کے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے گڑھ بنگلور میں فیس بُک پر توہین ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے