نازیبا ویڈیو میری نہیں، ایف آئی اے میں شکایت درج کرا دی، فاطمہ سہیل

لاہور: اداکار و گلوکار محسن عباس حیدر کی سابق اہلیہ فاطمہ سہیل نے اس بات کی سختی سے تردید کی ہے کہ سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی نہایت نازیبا ویڈیو ان کی نہ ہے۔اینکر فاطمہ سہیل نے انسٹاگرام پر اپنی ایک پوسٹ میں سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی انتہائی نازیبا ویڈیو کے حوالے سے کہا ہے کہ ویڈیو میں دکھائی دینے والی لڑکی میں نہیں ہوں لیکن یہ ویڈیو میرا نام استعمال کرکے پھیلائی جارہی ہیں جس پر ایف آئی اے میں شکایت بھی درج کرائی ہے۔

ایف آئی اے لاہور کے ڈپٹی ڈائریکٹر سرفراز چوہدری نے انڈیپینڈنٹ اردو سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ویڈیو کے فرانزک ٹیسٹ سے فاطمہ سہیل کا دعویٰ درست ثابت ہوتا ہے، ویڈیو میں موجود لڑکی فاطمہ سہیل نہیں بلکہ کوئی اور ہے۔ایف آئی اے سائبر کرائم سیل کے ڈپٹی ڈائریکٹر نے مزید بتایا کہ فاطمہ سہیل کی درخواست موصول ہوگئی ہے جس پر کارروائی کرتے ہوئے پاکستان ٹیلی کمیونی کیشن اتھارٹی کو سوشل میڈیا سے مذکورہ ویڈیو کو ہٹانے کے لیے خط لکھ دیا ہے۔

واضح رہے کہ فاطمہ سہیل نے چند ماہ قبل اپنی زخمی حالت میں تصاویر اپ لوڈ کی تھیں اور اپنے شوہر محسن حیدر پر تشدد کا نشانہ بنانے کا الزام عائد کیا تھا، محسن حیدر نے الزامات کی تردید کی تھی تاہم فاطمہ سہیل نے لاہور کورٹ کے ذریعے دو ماہ قبل خلع لے لی تھی۔ فاطمہ سہیل اس سے قبل بھی اپنے سابق شوہر کے خلاف ایف آئی اے میں شکایت درج کرواچکی ہیں۔

About BBC RECORD

Check Also

چیچنیا کی آمنہ کے فطری حسن نے پوری دنیا کو حیران کردیا

Share this on WhatsAppروس میں ان دنوں ایک گیارہ سالہ لڑکی آمنہ کا بہت چرچا ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے