پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں فضائی آلودگی میں اضافہ ، شہر کے تمام اسکول بند

پاکستان کے شہر اور پنجاب کے دارالحکومت لاہور میں فضائی آلودگی میں اضافے اور اسموگ کی شدت کے باعث جمعرات کو تمام اسکول بند ہیں تاہم رات ہونے والی بارش کی وجہ سے اسموگ کی شدت میں کمی آئی ہے۔ بدھ کی شام اسموگ کی شدت میں اچانک اضافہ ہوگیا تھا جس کے بعد وزیرِ اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ایک ٹوئٹ کے ذریعے اعلان کیا کہ شہر کے تمام اسکول جمعرات کو بند رہیں گے۔

ٹوئٹ میں وزیرِ اعلٰی پنجاب نے مزید کہا کہ حکومت اسموگ کا جائزہ لے رہی ہے اور فصلوں کا فضلہ جلانے سمیت دیگر عوامل جو اسموگ میں اضافے کا سبب بنتے ہیں، ان کے خلاف اقدامات کے لیے احکامات جاری کر دیے گئے ہیں۔تاہم بدھ کی شب ہونے والی بارش اور ہوا کا رخ تبدیل ہونے کی وجہ سے شہر میں صورتِ حال بہتر ہوئی ہے اور جمعرات کو اسموگ بڑی حد تک ختم ہوگئی ہے۔محکمۂ موسمیات کے ترجمان کا کہنا ہے کہ لاہور میں بدھ کی رات ہونے والی بارش کی وجہ سے اسموگ میں مزید اضافے کا خطرہ ٹل گیا ہے۔

لیکن اس سے قبل بدھ کو لاہور کے شہریوں کو اسموگ کے باعث سخت پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ لوگوں کو سانس لینے میں دشواری پیش آئی جب کہ کھلی فضا میں نکلنے پر آنکھوں میں جلن کی شکایات بھی عام رہیں۔پاکستان میں 22 فی صد اموات کا سبب فضائی آلودگی ہے: لاہور میں قائم آب و ہوا کا جائزہ لینے والے ادارے کے مطابق بدھ کی رات 10 بجے کے قریب اسموگ کی سطح میں خطرناک حد تک اضافہ ریکارڈ کیا گیا تھا جب کہ اس دوران لاہور کا ایئر کوالٹی انڈیکس 2.5 سے 580 پی ایم کے درمیان تھا۔

اسموگ میں اضافے کے باعث حدِ نگاہ بھی کم ہو گئی تھی جب کہ ماہرینِ صحت نے لوگوں، بالخصوص بچوں اور بزرگوں کو مشورہ دیا تھا کہ وہ کھلی فضا میں نکلنے سے گریز کریں اور پانی کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں۔یاد رہے کہ بھارت کا دارالحکومت نئی دہلی اور اس کے ملحقہ بعض علاقے بھی گزشتہ کئی دنوں سے اسموگ کی لپیٹ میں ہیں۔ اسموگ میں اضافے کی بڑی وجہ دیہاتوں میں جلائے جانے والے زرعی فضلے کو قرار دیا جا رہا ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

نواز شریف کا نام ای سی ایل سے نکال دیا جائے گا، گورنر پنجاب

Share this on WhatsAppلاہور: گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ...

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *