ایمنسٹی انٹرنیشنل کا یمن میں تمام گرفتار شدگان کی رہائی کا مطالبہ

انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے مطالبہ کیا ہے کہ یمن میں تمام گرفتار شدگان کو رہا کیا جائے اور جبری طور پر روپوش کر دیے جانے والوں کے انجام کا انکشاف کیا جائے۔ایمنسٹی کی جانب سے یہ مطالبہ حال ہی میں قیدیوں اور مغویوں سے متعلق کیس کھولے جانے کے پس منظر میں سامنے آیا ہے۔ ان قیدیوں کی رہائی کے تبادلے کا معاملہ کھٹائی میں پڑ گیا اور حوثی ملیشیا نے اسے سیاسی فائدہ اٹھانے کی غرض سے ایک علاحدہ معاملہ بنا دیا۔

گرفتار شدگان کی رہائی کا مطالبہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب متاثرین کے گھر والوں اور یمن میں انسانی حقوق کی مقامی اور بین الاقوامی تنظیموں کی جانب سے اپیل کی جا رہی ہے کہ کئی برسوں سے جیل میں سڑنے والے ہزاروں گرفتار شدگان کی رہائی کے واسطے حوثی ملیشیا پر مزید دباؤ ڈالا جائے۔دوسری جانب لاپتہ افراد کی ماؤں کی انجمن کے مطابق حوثی ملیشیا نے اپنے زیر قبضہ علاقوں میں شہریوں کو اغوا کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔ مزید یہ کہ مغوی شہریوں کو حوثیوں کی جیلوں میں تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

انجمن نے اپنے ایک بیان میں واضح کیا کہ حوثی ملیشیا کی جیلوں میں قید مغوی شہریوں کے اہل خانہ کو مالی اور نفسیاتی بلیک میلنگ کا سامنا ہے۔
بیان کے مطابق تقریبا 189 مغوی شہریوں کو حوثی قیدیوں کے بدلے رہا کیا گیا جو گذشتہ برس لڑائی کے مختلف محاذوں پر پکڑے گئے تھے۔ حالات کے پیش نظر رہائی پانے والے شہری حوثی ملیشیا کے زیر قبضہ علاقوں سے باہر اپنے گھر والوں سے دور چلے جانے پر مجبور ہوتے ہیں تا کہ دوبارہ اغوا نہ کر لیے جائیں۔

About BBC RECORD

Check Also

عراق چہلم کے موقع پر کربلا میں کروڑوں زائرین حسینی کا اجتماع

Share this on WhatsAppبغداد: عراق سمیت دنیا کے بیشتر ملکوں میں شہدائے کربلا کا چہلم ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے