ایرانی وزارت خارجہ نے امریکی تھنک ٹینک پر پابندی عائد کر دی

ایرانی وزارت خارجہ نے اپنے ملک میں ایک امریکی تھنک ٹینک "فاؤنڈیشن فار ڈیفنس آف ڈیموکریسیز”(FDD) پر پابندی عائد کر دی ہے۔ اس تھنک ٹینک کا ہیڈ کوارٹر واشنگٹن میں ہے۔ ایرانی وزارت خارجہ نے ہفتے کے روز جاری بیان میں بتایا کہ ادارے کے سربراہ مارک ڈوبووٹز کو بھی بلیک لسٹ کر دیا گیا ہے۔ بیان میں سخت لہجے میں کہا گیا ہے کہ اس ادارے نے بالخصوص اس کے سربراہ نے دانستہ طور پر امریکی پابندیوں کی تیاری اور ان کو عائد کیے جانے میں سرگرم کردار ادا کیا جو کہ ایران کے خلاف "اقتصادی دہشت گردی” ہے۔

امریکی وزارت خارجہ کی ترجمان مورگن اورٹیگوس نے اتوار کے روز ایک بیان میں ایرانی فیصلے کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ "امریکا ایرانی حکومت کی دھمکیوں کو سنجیدگی سے لے رہا ہے … ہم کسی بھی امریکی کی سلامتی میں بلا واسطہ یا بالواسطہ خلل ڈالنے کا ذمے دار ایران کو ٹھہرانے کا ارادہ رکھتے ہیں دوسری جانب "فاؤنڈیشن فار ڈیفنس آف ڈیموکریسیز” (ایف ڈی ڈی) نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ادارہ قومی سلامتی کے امور کے حوالے سے آزاد تحقیق اور تجزیہ کرتا ہے .. اور جب کہ اسلامی جمہوریہ (ایران) اندرون ملک اس آزادی پر پابندی عائد کر رہا ہے تو وہ بیرون ملک بھی ایسا کرنا چاہے گا”۔

بیان میں کہا گیا کہ ایرانی حکمراں نظام "عوام کو مسلسل وحشیانہ کریک ڈاؤن کا نشانہ بنا رہا ہے، ان کی دولت چوری کر رہا ہے اور مشرق وسطی میں تباہی اور انارکی کو جنم دے رہا ہے”۔ ایف ڈی ڈی کے سربراہ مارک ڈوبووٹز نے اپنی ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ یہ میرے اور ادارے کے علاوہ ہمارے ایرانی اور غیر ایرانی دوستوں کے خلاف براہ راست خطرہ ہے۔ ان دھمکی آمیز اقدامات سے ایران میں حکمراں نظام کی حقیقت کے بارے میں تحقیق اور انکشافات کے حوالے سے ہمارے عزم میں اضافہ ہو گا .. اور آزادی کے حوالے سے ایرانیوں کی اکثریت کی خواہش بڑھ جائے گی۔ ماہرین کے مطابق امریکی اداروں کی سرزنش کے ایرانی اقدامات محض علامتی ہیں جو ان اداروں کی سرگرمیوں پر اثر انداز نہیں ہوں گے۔

About BBC RECORD

Check Also

مودی نے کوئی جارحیت کی تو اختتام اس کے ہاتھ میں نہیں ہوگا، صدر آزادکشمیر

Share this on WhatsAppآزاد کشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے