بھارت میں طالبہ کے ساتھ کیب میں عصمت دری، کیس درج

نئی دہلی، دارالحکومت کے ممتاز تعلیمی ادارے جے این یو کی سیکنڈ ایئر کی اسٹوڈنٹ کے ساتھ کیب ڈرائیور کی طرف سے مبینہ طور پر ریپ کئے جانے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔اس کے ساتھ یہ حادثہ اس وقت ہوا جب وہ اپنے دوست کے گھر سے لوٹ رہی تھی۔21 سال کی اس لڑکی نے پولیس کو بتایا کہ اس نے مندرمارگ میں کیب لی تھی اور کیب ڈرائیور ریپ کرنے کے بعد تین گھنٹے تک کار گھما تھارہا۔

شکایت کنندہ کو جنوبی دہلی میں ایک پارک کے قریب نیم بیہوشی کی حالت میں کچھ مقامی لوگوں نے دیکھا جنہوں نے اسے ہسپتال میں داخل کرایا،وہاں ڈاکٹروں نے اس کے ساتھ جنسی زیادتی کی تصدیق کی۔لڑکی کو ہسپتال سے چھٹی دئے جانے کے بعد وہ اپنے ہاسٹل پہنچی اور انتظامیہ کو واقعہ کی اطلاع دی۔

اسے پولیس کے پاس لے جایا گیا جہاں کیس درج کیا گیا۔اس نے بتایا کہ کیب ڈرائیور نے اسے کھانے کے لئے کچھ دیا جس کے بعد وہ بیہوش ہو گئی۔اس کے بعدڈرائیور نے اس کے ساتھ ریپ کیا۔متاثرہ طالبہ کی طرف سے دی گئی معلومات کی بنیاد پر پولیس ڈرائیور کو پکڑنے کی کوشش کر رہی ہے۔متاثرہ طالبہ مغربی یوپی کی رہنے والی ہے اور وہ جے این یو میں بیرون ملک زبان کی تعلیم حاصل کر رہی ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

سابق بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج دل کا دورہ پڑنے سے چل بسیں

Share this on WhatsAppسابق بھارتی وزیر خارجہ اور حکمراں جماعت بھارتیا جنتا پارٹی (بی جے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے