پولیس قوانین کے مطابق 450 شہریوں کے لئے ایک اہلکار ہونا لازمی ہے

فیصل آباد: جرائم کی وارداتیں آئے روز بڑھ رہی ہیں جس کی وجہ پولیس نفری کی شدید کمی ہے امن وامان کی بگڑتی صورت حال کے باعث شہری خوف کا شکار ہیں۔ سٹی پولیس آفیسر نے حکام سے نفری ڈبل کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے۔

پنجاب کے دوسرے بڑے شہر کی آبادی تقریباً 90 لاکھ ہے لیکن پولیس کی نفری صرف 8 ہزار ہے۔ آبادی کے تناسب سے 1100 شہریوں کے لئے صرف ایک پولیس اہلکار دستیاب ہے جبکہ پولیس قوانین کے مطابق 450 شہریوں کے لئے ایک اہلکار ہونا لازمی ہے۔

فیصل آباد کے 41 تھانوں میں صرف 3 ہزار اہلکار تعینات ہیں جو ہزاروں کریمنلز کو قابو کرنے کے لئے ناکافی ہیں۔ اس وجہ سے جرائم کی شرح میں خطرناک اضافہ ہو چکا ہے۔آٹھ ہزار اہلکاروں میں سے زیادہ تر سیکیورٹی اور پروٹوکول ڈیوٹی پر تعینات ہیں۔ سٹی پولیس آفیسر کہتے ہیں کہ آبادی کے تناسب سے 27 ہزار اہلکار ہونے چاہیں۔ نفری کو ڈبل کرنا ناگزیر ہو چکا جس کا مطالبہ کر رکھا ہے۔

ادھر محافظوں کی کمی کے باعث جرائم پیشہ عناصر سڑکوں پر کھلے عام لوٹ مار کر رہے ہیں۔ صنعتی شہر کے تاجر کہتے ہیں حکومت معاملہ کا نوٹس لے اور ان کی جان ومال کے تحفظ کے لئے پولیس نفری پوری کی جائے۔

About BBC RECORD

Check Also

دنیا بھر کے ممالک میں روزے کا دورانیہ

Share this on WhatsAppنسیم الغنی بی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ( اسلام آباد ) ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے