یہ جنگ بھی ماضی کی طرح سرحدوں پر ہی ختم ہوجاہیگی۔ عامر فہیم

خانیوال : پاک انڈیا جنگی کھیل اسوقت ابھارا جاتا ہے جب دونوں طرف عوام اپنے مساہل کیخلاف ذیادہ شدت سے آواز اٹھانا شروع کرتے ہیں تب دونوں طرف کے حکمران سرحدی تناؤ پیدا کرتے ہوے عوام میں جنگی جنون اور محب الوطنی کا جذبہ ابھارتے ہوے انہیں اپنے حقیقی مساہل سے توجہ ہٹانے میں کامیاب ہوتے ہیں اور اس درمیانی عرصہ میں مہنگائی کاعفریت ذدہ عذاب نازل ہوتا ہے جسکا برائے راست اثر عوام پر پڑتا ہے جبکہ حکمران طبقات کی معیشت کے خزانے میں شرح اور شرح منافع بڑھ جاتا ہے۔ ایک مقررہ ٹاگٹ حاصل کرنے تک یہ کھیل جاری رکھا جاتا ہے۔

عامر فہیم نے بتایا کہ موجودہ صورتحال کی بنیادی وجہ ہندوستان میں اپریل میں ہونے والے الیکشن ہیں جس میں مودی سرکار کا نااہلیت اور عوام میں گرتا ہوا گرا گراف انکی ہار کی گھنٹی بجا رہا ہے۔ اس مقبولیت کے گراف کو اوپر کرنے کیلئے پلوامہ حملہ کروایا گیا تاکہ عوام کے اندر محب الوطنی کیساتھ مودی بہادر کا نعرہ ابھارا جا سکے اور الیکشن میں فتح کو یقینی بنایا جاسکے جو کسی حد تک مودی سرکار اپنے اس مقصد میں کامیاب دیکھائی دے رہی ہے۔ اس ڈرامے میں دونوں طرف کے حکمران طبقات کی ملی بھگت شامل ہے۔ ان دونوں ممالک میں اتنی سکت نہیں ہیے کہ وہ ایک ہولناک جنگ افورڈ کر سکیں۔ محض عوام میں خوف وہراس پھیلا کہ اپنے مقاصد حاصل کرنا انکی اولین ترجیح ہے۔

یہ سلسلہ الیکشن سے پہلے ختم ہو جائے گا۔ کوئی بڑی جنگ کی کوئی امید نہیں کی جاسکتی کیونکہ عالمی سامراج انکو اتنی ڈیل نہیں دے گا۔ اس صورتحال میں دنیا کی سب سے بڑی منافع بخش اسلحہ ساز کمپنی جو امریکہ اور اسراہیل کی اجارہ داری میں قاہم ہے,سے مزید اسلحہ خرید کر اس کمپنی کے منافع میں اضافہ کرنا ہوتا ہے۔ جنگ عام عوام کیلئے تبائی اور حکمران طبقے کیلئے منافع بخش ثابت ہوتی ہے۔ یہ جنگ بھی ماضی کی طرح سرحدوں پر ہی ختم ہوجاہیگی۔
پی ڈی ایف – سدرن فرنٹ

About BBC RECORD

Check Also

5سالہ بچی کیساتھ امریکی ایمبیسی کمپلیکس میں ریپ ،درندہ صفت شخص گرفتار

Share this on WhatsAppاسلام آباد: امریکی ایمبیسی کمپلیکس میں 5سالہ بچی کے ساتھ زیادتی۔ عالمی ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے