امریکا نے شام پر ممنوعہ فاسفورس بم گرائے، روس

ماسکو / واشنگٹن: روس نے الزام عائد کیا ہے کہ امریکا نے شام کے ایک دیہات پر فضائی حملے میں فاسفورس بم کی ایک ممنوعہ قسم کو استعمال کیا ہے۔ خبر رساں ادارے کے مطابق روسی فوج نے امريکا پر شام ميں خطرناک سفید فاسفورس بم گرانے کا الزام عائد کيا ہے۔ یہ بم امریکی فضائیہ نے شام کے صوبے دیر الزور کے دیہات میں گرائے جس سے دیہات مکمل طور پر تباہ ہوگیا۔

روسی فوج کے اعلیٰ حکام نے مزید کہا کہ امريکا کے دو F-15 لڑاکا طياروں نے بین الاقوامی جنگی قوانین کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے صوبہ دير الزور کے دیہات پر 8 اور 9 ستمبر کی درمیانی شب فاسفورس بم گرائے تاہم روسی حکام نے حملے سے ہونے والے جانی نقصان سے متعلق کچھ نہیں بتایا

دوسری جانب امريکی محکمہ دفاع پينٹاگون نے روسی الزامات کو مسترد کرتے ہوئے اسے مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ روس من گھڑت پروپیگنڈے سے باز رہے۔ پینٹاگون کا کہنا ہے کہ شام میں موجود امريکی افواج کے پاس فاسفورس بم نہیں ہيں اس لیے اس خطے میں فاسفورس بم حملے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہے۔

واضح رہے کہ انسانی حقوق کی تنظيموں نے بھی امريکی عسکری اتحاد کی جانب سے فاسفورس بم کے استعمال پر کئی بار احتجاج کرتے ہوئے مختلف فورم پر آواز بھی اُٹھائی تھی۔

About BBC RECORD

Check Also

لیبیا کی جیل سے معمر قذافی کے سیکڑوں حامی فرار

Share this on WhatsAppطرابلس: لیبیا کے دارالحکومت کی جیل سے مقتول صدر معمر قذافی کے ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے