ایران شام میں امن مساعی کو سبوتاژ کررہا ہے:عالمی اتحاد

شام اور عراق میں ‘داعش‘ کی سرکوبی کے لیے سرگرم عالمی عسکری اتحاد نے کہا ہے کہ عالمی فوجیں دونوں عرب ملکوں میں داعش کی مکمل شکست تک وہاں موجود رہیں گی۔’داعش‘ عالمی فوجی اتحاد کے چیف آپریشنز جنزل جیمز جیراڈ نے ایک بیان میں کہا کہ عالمی فوجیں شام میں سیاسی عمل کی تکمیل تک موجود رہیں گی تاکہ ‘داعش‘ اور دیگر دہشت گرد دوبارہ سر نہ اٹھا سکیں۔عالمی عسکری اتحاد کے عہدیدار نے شام میں ایرانی سرگرمیوں پر تشویش کا اظہار کیا اور الزام عاید کیا کہ ایران شام میں دیر پا امن کی کوششوں کو سبو تاژ کررہا ہے۔

جنرل جیراڈ کاکہنا تھا کہ شام میں ایران کا کردار مثبت نہیں۔ تہران شام میں استحکام کے بجائے دہشت گردی کی پشت پناہی کررہا ہے۔ عالمی برادری کو شام میں ایران کے منفی کردار اور دہشت گرد ملیشیاؤں کی معاونت کا سخت نوٹس لینا چاہیے۔ جنرل جیمز جیراڈ نے کہا کہ شام میں دہشت گرد گروپوں کو کچلنے تک امن قائم نہیں ہوسکتا مگر ایران وہاں پر تشدد، دہشت گردی اور انتہا پسندی کو ہوا دے رہا ہے۔ ہم یقین سے کہہ سکتے ہیں کہ ایران شام میں امن وامان کی کوششوں کو تباہ کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔

عالمی عسکری اتحاد کے عہدیدار نے کہا کہ شام کے بہت سے علاقوں میں سیرین ڈیموکریٹک فورسز نے داعش کو شکست دی ہے مگر عالمی فوجیں اس وقت تک شام میں موجود رہیں گی جب تک داعش کومکمل طورپر ختم نہیں کردیا جاتا۔ داعش کے زیرتسلط شام کے دیگر شہروں کو بھی آزاد کرانے کے لیے آپریشن جاری رکھے جائیں گے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم بہ خوبی جانتے ہیں کہ شام میں داعش کےخلاف جاری جنگ ختم نہیں ہوئی ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

شام ميں روس کا فوجی طیارہ تباہ، 15 اہلکار ہلاک

Share this on WhatsAppدمشق: شام میں روسی فوجی طیارہ تباہ ہونے کے نتیجے میں 15 ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے