ایران اور عراق کے سرحدی علاقے میں شدید زلزلہ، ’120 سے زائد ہلاکتیں‘300 زخمی

عراق اور ایران کے سرحدی علاقے میں آنے والے سات اعشاریہ تین شدت کے زلزلے کے نتیجے میں متعدد افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔
خبر رساں ایجنسی روئٹرز کے مطابق سب سے زیادہ نقصان عراق کی سرحد سے متصل ایرانی صوبے کرمانشاه‎‎ کے علاقے سرپل ذهاب میں ہوا ہے۔

ایران کی سرکاری نیوز ایجنسی ارنا کا کہنا ہے کہ امدادی کارکنوں کو زلزلے سے متاثرہ ملک کے مغربی علاقوں میں روانہ کر دیا گیا ہے۔
امدادی ادارے ریڈ کریسنٹ کے سربراہ مرتضیٰ سلیم کا کہنا ہے کہ زلزلے کے نتیجے میں آٹھ دیہات کو نقصان پہنچنے کی اطلاعات ملی ہیں جبکہ متعدد دیہات میں بجلی اور مواصلات کا نظام متاثر ہوا ہے۔
امریکی جیولوجیکل سروے کے مطابق زلزلے کا مرکز عراق کے جنوبی شہر حلبجہ تھا اور اس کی زمین میں گہرائی 33.9 کلومیٹر تھی۔

روئٹرز کے مطابق صوبے کے ڈیپی گورنر نے سرکاری میڈیا کو بتایا ہے کہ صوبے میں زلزلے کے نتیجے میں کم از کم 129 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔عراق سے ملنے والی ابتدائی اطلاعات کے مطابق چار افراد ہلاک اور پچاس کے قریب زخمی ہوئے ہیں جبکہ ایران میں زلزلے کے نتیجے میں تین سو افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں