Then-General Khalifa Haftar speaks during a news conference in Abyar, east of Benghazi May 31, 2014. Growing frustration over the reality of life in eastern Libya, which contrasts with the promises of politicians, is feeding support for Haftar, who has set himself up as a warrior against Islamist militancy and who some also see as their saviour. Picture taken May 31, 2014. REUTERS/Esam Omran Al-Fetori (LIBYA - Tags: CIVIL UNREST POLITICS MILITARY) - RTR4QLUA

خلیفہ حفتر کا قطر پر لیبیا میں دہشت گردی کی حمایت کا الزام

لیبیا کی قومی فوج کے سربراہ جنرل خلیفہ حفتر نے قطر اور بعض دوسرے ممالک پر اپنے ملک میں دہشت گرد گروپوں کی حمایت کا براہ راست الزام عاید کیا ہے اور کہا ہے کہ یہ ممالک لیبیا میں انتہا پسند گروپوں اور ملیشیاؤں کی مالی معاونت کررہے ہیں۔

خلیفہ حفتر نے اتوار کی شب جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ لیبیا میں چاڈی ، سوڈانی اور افریقی کمیونٹیوں کی بالعموم اور عرب کمیونٹیوں کی بالخصوص نگرانی کی جارہی ہے۔یہ لوگ سرحدوں پر کنٹرول میں نرمی کی وجہ سے ملک میں داخل ہوئے تھے اور علاقائی ممالک اور دہشت گردی کی حمایت کرنے والے ممالک نے ان کی مدد ومعاونت کی تھی۔

انھوں نے کسی اور ملک کا نام نہیں لیا لیکن قطر کا براہ راست نام لیا ہے اور کہا ہے کہ ان لوگوں کو قطر اور دوسرے ممالک کے علاوہ لیبیا میں موجود دہشت گرد گروہوں کی جانب سے رقوم ملتی رہی ہیں۔

انھوں نے مزید کہا ہے کہ مسلح افواج ان لوگوں کی کڑی نگرانی کررہی ہیں اور ان گماشتہ ملیشیاؤں کو سکیورٹی فورسز کے ہاتھوں سخت ہزیمت اٹھانا پڑے گی۔

لیبیا کی مسلح افواج کے کمانڈر انچیف نے ملک میں غیرملکی شہریوں کے ہتھیار لے کر چلنے پر سخت پابندی عاید کردی ہے اور کہا ہے کہ جو کوئی بھی غیرملکی مسلح نظر آیا تو اس کو گرفتار کر لیا جائے گا اور پھر ایسے افراد کو اجتماعی یا انفرادی سز ا دی جائے گی۔انھوں نے وضاحت کی ہے کہ اگر کوئی لیبی شہریوں کی مدد کے لیے آیا تھا تو اس کو بھی ہتھیار بند ہونے کی صورت میں پکڑ لیا جائے گا۔

About BBC RECORD

Check Also

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن بھی کرونا وائرس کا شکار ہوگئے

Share this on WhatsAppبی بی سی ریکارڈ لندن نیوز ؛ برطانیہ وزیر اعظم بورس جانسن ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے