افغانستان، سیکیورٹی فورسز کے آپریشن میں 97 شدت پسندوں کی ہلاکت کا دعویٰ

کابل افغانستان میں امریکی ڈرون حملے اور سیکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران 97 شدت پسندوں کی ہلاکت کا دعویٰ کیا گیا ہے جبکہ طالبان کے سپریم لیڈر ملا ہیبت اللہ اخوندزادہ نے عسکری کارروائیو ں میں مزید شدت لانے کیلیے 16فرضی گورنروں سمیت 24 عہدیداران کو تبدیل کر دیا۔
افغان میڈیا کے مطابق شمالی صوبہ سرائے پل میں افغان فورسز کے آپریشن میں 80 شدت پسند ہلاک اور 60 دیگر زخمی ہوگئے جبکہ 2 غیر ملکیوں سمیت 10کو گرفتارکر لیا گیا ہے جبکہ سیکیورٹی ڈائریکٹر اور قائمقام سیکیورٹی کمانڈرکرنل عنایت اللہ حبیبی کا کہنا ہے کہ سرائے پل سٹی، سوزما قلعہ، سینچارک، سیاد اضلاع میں کیے جانیوالے آپریشنز کا مقصد علاقے میں امن واستحکام کو یقینی بنانا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ 20 طالبان عسکریت پسند ہتھیار ڈال کر امن عمل میں شامل ہوگئے۔ مشرقی صوبہ ننگرہار میں ڈرون حملے اور سیکیورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپ میں داعش اور لشکر اسلام کے 10شدت پسند ہلاک ہوگئے۔
دوسری جانب صوبائی پولیس کمانڈنٹ نے ایک بیان میں بتایا کہ ضلع آچن میں کیے جانے والے ڈرون حملے میں داعش کے 2 اور لشکر اسلام کے 5 شدت پسند مارے گئے۔ بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ گروپ کے کمانڈر کی شناخت قاضی شاہد کے نام سے ہوئی ہے جو ہلاک ہونے والوں میں شامل ہے۔

About BBC RECORD

Check Also

ٹرمپ نے کانگرس کو 3000 امریکی فوجیوں کی سعودی عرب میں تعیناتی بارے آگاہ کردیا

Share this on WhatsAppامریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کانگرس کو باضابطہ طور پر 3000 امریکی ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے