لیسکو کا بجلی کے بلوں کی مد میں 12 ارب روپے وصول کرنے کا انکشاف امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد

لاہور امیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمد نے لیسکو کی جانب سے ہر ماہ بجلی کے بلوں کی مد میں 12 ارب روپے وصول کرنے کے انکشاف پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سردی کی آمد کے باجود لیسکو حکام 6لاکھ سے زائد میٹروں کو خراب قرار دے کر بجلی کی اصل لاگت سے کئی گنا زیادہ بل عوام سے وصول کئے جا رہے ہیں ، جن کے پاس کھانے پینے کو کچھ نہیں وہ اپنی محدود آمدن میں ہزاروں روپوں کے بل کیسے ادا کر سکتے ہیں،عوام کی پریشانیوں میں اضافہ ہو گیا ہے، لیسکو کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے خلاف سخت ایکشن لیا جانا چاہے، ایک طرف بجلی کی لوڈ شیڈنگ نے عام شہری کی زندگی اجیرن کردی ہے جبکہ دوسری طرف وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی نے خود اور بلنگ کااعتراف کیا ہے، ہزاروں صنعتوں بند اور لاکھوں مزدور بے روز گاری کی وجہ سے فاقوں کا شکا ر ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز مختلف تقریبات سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے ساڑھے تین سالہ دور اقتدار میں مہنگائی میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے۔معیشت بڑھوتری کی بجائے جمود کا شکار ہے اور کسان زبوں حالی کی تصویر بنے ہوئے ہیں۔حکومت نے اپنے دور میں اندرونی اور بیرونی قرضوں کے سابقہ تمام ریکارڈ توڑ دیے ہیں ۔اس وقت بچے سے لے کر بوڑھے تک ہر شہری ایک لاکھ روپے کا مقروض ہے۔انہوں نے کہا کہ رواں سیزن کپاس ہدف میں کمی کا خدشہ ہے جس سے کسانوں کواربوں رو پے کا مالی نقصان ہوگا۔ زرعی مداخلات پر سیلز ٹیکس لگنے سے کسان طبقہ شدید پریشان ہے ۔کھاد کی قیمتوں میں کئی گنااضافہ ہواہے۔حکومتی اخراجات میں50%کمی کرکے ہائیڈل پاور پراجیکٹ بجلی کی پیداوار میں اضافہ کرے۔ کرپشن کو کنٹرول کرنے کے لئے احتساب کے عمل کو شفاف بنایا جائے۔ اس حوالے سے پور ی قوم کی نگاہیں سپریم کورٹ پر لگی ہیں۔اب وقت آگیا ہے کہ کرپٹ عناصر کو منقی انجام تک پہنچاہا جائے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی مداخلت پر سیلز ٹیکس کا خاتمہ کیا جائے تمام اہم عہدوں پر تعیناتی میرٹ پر کی جائے۔زرعی تحقیق پر توجہ مرکوز کی جائے تاکہ فی ایکڑ اوسطاًپیداواربڑھائی جائے اور کسانوں کو ان کی پیداوار کا معقول معاوضہ یقینی بنا یا جائے۔حکمرانوں کی ناعاقبت اندیش پالیسیوں سے ملکی سلامتی اور قومی وقار داؤ پر لگ چکا ہے ۔

About BBC RECORD

Check Also

پاکستان میں مہنگائی کی رفتار مزید تیز ہونے کا خدشہ، ورلڈ بینک

Share this on WhatsAppFollow @cmsvoteup Share on FacebookShare on TwitterShare on Google+ Share this on ...

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے